Question & Answer

  • عدالتی خلع کا حکمِ شرعی

             کیا فرماتے ہیں علماء کرام اس مسئلہ  کے بارے میں کہ

           مسماۃ رفیعہ کا " اعجاز احمد" سے ایک تولہ سون پر نکاح  ہوا ، اور رخصتی سے قبل مسماۃ رفیعہ نے کورٹ میں خلع کی اپیل دا ئر  کی  اور دعویٰ کیا کہ اعجاز احمد بے روز گار ہے ،برے کردار کا مالک ہے ،سارا وقت غلط دوستوں کے ساتھ گذارتا ہے ،ساری رات اپنے دوستوں کے ساتھ شراب پیتا ہے ،میرے فیملی میمبرز کی بے عزتی اور انہیں زد و کوب کرتا ہے ، لھذا میں مذکورہ بالا وجوہ کی بناء پر میں"اعجاز احمد" سے خلع کے ذریعے نکاح ختم کرانا  چاہتی ہوں ۔۔۔!مسماۃ رفیعہ کی درخواست  پر عدالتی خلع واقع ہوگیا ۔جسکے بعد سیف اللہ نے  مسماۃ رفیعہ سے نکاح کیا  اور رخصتی بھی ہوئی۔۔۔،اعجاز احمد  اس بات پر مصر ہے کہ وہ   نہ تو جج کے سامنے حاضر ہوا نہ ہی اس نے وکیل کیا، البتہ کورٹ سے نوٹس آتا تھا اور میں اس سے لا تعلقی کا اظہار کرتا تھا، جبکہ فریقِ آخر (لڑکی والے ) کہتے ہیں کہ اعجاز احمد   خود  ایک دفعہ عدالت میں حاضرہوا، اور اس نے وکیل بھی کیا  اور اسکے وکیل نے لکھ دیا کہ اعجاز احمد نے مجھے وکیل بنایا ہے ،جیسا کہ کورٹ کے کاغذات سے  عیاں ہے ، بالآخر  جج کے اس سے پوچھنے پر کہ کیا بات ہے آپکا مؤکِل کورٹ میں حاضر نہیں ہوتا ؟  کے جواب میں اعجاز احمد کے  وکیل نے کہا کہ وہ حاضر نہیں ہونا چاہتا،تو جج نے پوچھا تو پھر کیا رفیعہ کے حق  مہر چھوڑنے کے عوض خلع دے دی جائے؟اسکے جواب میں اسکے وکیل نے کہا کہ ہاں خلع دے دی جائے،اس پر جج نے پوچھا کہ آپکو اعتراض تو نہیں؟تو وکیل نے کہا :کہ اعتراض نہیں ،اس پر جج نے کہا کیا آپ یہ لکھ کر دے سکتے ہیں ؟تو وکیل نے جواب لکھ دیا کہ کورٹ کے خلع والے فیصلے پر جوابدار کو کوئی اعتراض نہیں ،اور دستخط بھی کردیے ان تمامی باتوں کا لڑکی والوں کے پاس ثبوت موجوو  ہے۔نیزکورٹ کا جاری کردہ فیصلہ بھی اسکی مکمل تا ئید کرتا ہے  ۔

    الغرض : دریافت طلب امر یہ ہے کہ کیا  کورٹ کا خلع واقع ہوگیا ہے یا نہیں ؟  سیف اللہ کا مسماۃ رفیعہ کے ساتھ نکاح درست ہوا یا نہیں۔۔۔؟؟؟

    السا ئل:مولانا میاں محمد سومر انڈھر پنوعاقل

     

     بسم اللہ الرحمن الرحیم

    الجواب بعون الملک الوھاب

    صورتِ مستفسرہ میں کورٹ کا خلع نافذ العمل ہے ، مسماۃ رفیعہ کو ایک طلاقِ با ئن واقع ہوگئی اور  اعجاز احمد سے مسماۃ رفیعہ کا نکاح ختم ہوچکا ہے ،اور ازاں  بعد سیف اللہ سے مسماۃ رفیعہ کا کیا گیا نکاح  درست ہے ۔

     تفصیل درج ذیل ہے :

    لڑکی کے مھر چھوڑنے کے عوض جج کے خلع کے فیصلے پر اعجاز احمد کے وکیل کیطرف سے اظہارِ رضامندی   جیسا کہ کورٹ کے پیپرز سے عیاں ہے مؤکل کی رضامندی ہے۔بایں وجہ مذکورہ خلع  تام و نافذ العمل ہے ۔

     فتاوی ھندیہ میں ہے:

    إزالۃ ملک النکاح ببدل بلفظ الخلع
    (فتاوی ھندیہ ،کتاب الطلاق ،الباب الثامن فی الخلع وما فی حکمہ وفیہ ثلاثۃ فصول الفصل الأول فی شرائط الخلع وحکمہ وما یتعلق بہ الخلع،١:٤٨٨،دارالفکر بیروت)

     فتاوی ہندیہ میں ہے:
    (وحکمہ) وقوع الطلاق البائن کذا فی التبیین.وتصح نیۃ الثلاث فیہ.

    (فتاوی ھندیہ ،کتاب الطلاق ،الباب الثامن فی الخلع وما فی حکمہ وفیہ ثلاثۃ فصول الفصل الأول فی شرائط الخلع وحکمہ وما یتعلق بہ الخلع،١:٤٨٨،دارالفکر بیروت)
     فتاوی ھندیہ میں ہے: (وشرطہ) شرط الطلاق۔
    (فتاوی ھندیہ ،کتاب الطلاق ،الباب الثامن فی الخلع وما فی حکمہ وفیہ ثلاثۃ فصول الفصل الأول فی شرائط الخلع وحکمہ وما یتعلق بہ الخلع،١:٤٨٨،دارالفکر بیروت)
    فتح القدیر میں ہے:
    وشرطہ فی الزوج أن یکون عاقلا بالغا مستیقظا، وفی الزوجۃ أن تکون منکوحتہ أو فی عدتہ التی تصلح معہا محلا للطلاق.
    (فتح القدیر،کتاب الطلاق،٣:٤٦٣،دار الفکر بیروت)

     اگر بالفرض یہ تسلیم کرلیا جا ئے کہ اعجاز احمد نہ خود کورٹ میں حاضر ہوا، نہ اس نے کو ئی وکیل کیا، تو  بھی لڑکی کی طرف سے بیان کیئے گئے  اعذار مبرھنہ ہونے کیصورت میں کورٹ کےیک طرفہ خلع جو کہ  جو در اصل تنسیخِ نکاح ہے کے نفاذ کا حکم دیا جائے گا ۔ جسکا  نوے (90) دن کے بعداطلاق ہوگا اور زوجین کے مابین رشتہ ازدواج ختم ہوجائے گا ۔

    واضح رہے بایں صورت  یہ خلع نہیں،بلکہ فسخ نکاح ہوگا،جوکہ معدود صورتوں میں اعذار شرعیہ  کے  پائے جانے کیصورت میں نافذالعمل ہے۔جوکہ کورٹ کی اصطلاح میں لفظِ خلع سے معبر ہے ۔

               تصحیح وتصدیق                             واللہ تعالی اعلم بالصواب

        مفتی اعظم شیخ الحدیث                              کتبہ:جمیل احمدچنہ

              مفتی محمد ابراہیم القادری                          (عفی عنہ بمحمد ن المصطفی ﷺ)  

          رئیس دارالافتاء                                    الجامعۃ الغوثیۃ الرضویۃ بسکھر

       فی الجامعۃ الغوثیۃ الرضویۃ بسکھر                             2014-11-25

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری