Question & Answer

  • روزے کی حالت میں بلغم یا تھوک نگلنا کیسا ہے؟

    بسم اللہ الرحمن الرحیم
          کیا فرماتے ھیں علمائے دین اس مسئلہ کے بارے میں کہ اگر کوئی شخص روزے میں بلغم یا تھوک یا ناک نگل جائے تو روزے کا کیا حکم ہے؟
    سائل
    شان علی
     
    بسم اللہ الرحمٰن الرحیم
    الجواب
          روزے کی حالت میں منہ کے اندر یا اپنے ہونٹوں پر لگا اپنا تھوک یا بلغم نگل جانے سے روزہ نہیں ٹوٹے گا اسی طرح ناک مین جمع رینٹھ سانس کے ذریعے کھینچ کر نگل جانے سے بھی روزہ نہیں ٹوٹے گا۔
          کما فی التنویر مع الدر، نزل الی انفہ مخاط فاستشمہ فدخل حلقہ و ان نزل لرأس انفہ کما لو ترطب شفتاہ بالبذاق عند الکلام و نحوہ فابتلعہ او سال ریقہ الی ذقنہ کالخیط و لم ینقطع فاستنشقہ ولو عمدا لم یفطر۔
         (در مختار ص ۳۷۳ جلد ۳ مطبوعہ ملتان)
    واللہ تعالی اعلم
     کتبہ
    محمد زاہد محمود راجپوت المدنی
     

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری