Question & Answer

  • میکے میں عدت گزارنے سے شوہر پر نفقہ نہیں ہو گا


    مکرمی حضرت مفتی صاحب دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر

    السلام علیکم
    سوال:    کیا فرماتے ہیں مفتیانِ عظام اس مسئلہ پر کہ ایک شخص نے اپنی بیوی کو طلاق مکمل دی ہے محض اس بنا پر کہ بیوی اور ان کے والدین نے از خود طلاق مانگی تھی۔ عرصہ 4 سال سے وہ اپنے والدین کے ہاں جا کر صرف اس لیے بیٹھ گئی تھی کہ میں نے اب اس گھر ہر گز نہیں جانا مجھے یہ جگہ پسند نہ تھی لیکن میرے والد نے زبردستی میرا نکاح کیا ہے جبکہ میری مرضی فلاں فلاں جگہ تھی وغیرہ۔ بیوی نے طلاق مانگنے کے سلسلے میں ایک کیسٹ بھر دی کہ میں اب ہر گز نہیں آؤں گی اور تم دوسری شادی کر سکتے ہو۔ اس چار سال کے عرصہ میں براداربانہ طور پر مصالحت کی تمام تر کوششیں ناکام ہوئیں۔ آخر شوہر نے طلاق دے دی۔
        معلوم یہ کرنا ہے کہ
        عدت کتنے دِن کی ہو گی۔ (2) اور عدت کا خرچہ شوہر کے ذمہ ہے جبکہ وہ از خود اپنے میکے چلی گئی اور طلاق لینے کا مطالبہ بھی اس کی طرف سے تھا 4 سال سے۔ (3) جہیز کا سامان معہ زیور کے جوبھی تھا وہ تمام واپس کرنا ہے لیکن شوہر کے گھر کا جو زیور بیوی پر چڑھایا تھا وہ عارضی تھا اور شوہر کی ملکیت بھی بیوی کی ملکیت نہ تھی تو آیا وہ دیا جانا چاہیے یا نہیں؟ ہمیں شریعت کی روشنی میں راہنمائی فرما کر مشکور
    فرمائیں۔                                                       

             محمد یونس ولد محمد یوسف مرحوم شیخ
                                                                   
              طارق روڈ سکھر
    الجواب بعون الملک الوھاب
    الجواب(1):    اگر حاملہ ہے تو عدت وضع حمل ہے ورنہ تین ماہواری۔ واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    الجواب(2):    شوہر پر عدت کا خرچہ اس کے ہاں عورت کے ٹھہرنے کی وجہ سے واجب ہوتا ہے اور صورتِ مسؤلہ میں جب وہ عدت گزارنے میکے چلی گئی تو اب شوہر پرعدت کا خرچ واجب نہ رہا۔

    ہدایہ میں ہے

    و لناان النفقۃ جزاء احتباس۔(ہدایہ ج 2 ص 423)ترجمہ:ہمارے نزدیک نفقہ روکنے کا بدلہ ہے۔

    ردِالمحتار میں ہے

    ففی البحر لو تزوجت معتدۃ البائن و فرق بعد الدخول فلا نفقۃ علی الثانی لفساد نکاحہ و لا علی الاول ان خرجت من بیتہ لنشوزھا و فی المجتبی نفقۃ العدۃ کنفقۃ النکاح۔ ( ردِالمحتارص 921 ج 2

    ترجمہ:اگر طلاق بائن کی معتدہ نے نکاح کیااور دخول کے بعد ان میں تفریق کردی گئی تواسکے نکاح کے فاسد ہونے کی وجہ سے دوسرے شوہرپرنفقہ نہیں ہے اور نہ ہی پہلے شوہر پر اگر اس کے گھر سے اپنی نافرمانی کیوجہ سے نکلی۔اور مجتبی میں ہے کہ عدت کا نفقہ نکاح کے نفقہ کیطرح ہے۔
    اسی میں ہے

    والمطلقۃ اذا لم تلزم بیت العدۃ لا نفقۃ لھا فلیس للردۃ اوالتمکین دخل فی الاسقاط و عدمہ بل ان وجد الاحتباس فی بیت العدۃ وجبت و الا فلا۔( ردِالمحتارص 923 ج 2

    ترجمہ:اور مطلقہ جب عدت کے گھر میں نہ رہے تو اس کیلئے کوئی نفقہ نہیں کیونکہ ردۃ اور تمکین کواسقاط اور عدم اسقاط (نفقہ)میںکچھ دخل نہیں۔اگر عدت کے گھر میں رکنا پایا گیا تونفقہ واجب ہے ورنہ نہیں۔آخری عبارت کے آخری خط کشیدہ الفاظ صورتِ مسؤلہ کا صریح جزئیہ ہیں۔ واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب
    الجواب(3):    اس معاملہ میں سسرال والوں کے عرف و رواج کو دیکھا جائے گا۔ اگر ان کے ہاں دُلہن کو زیورات جوڑے کپڑے محض پہننے کودیئے جاتے ہیں اسے مالک نہیں کیا جاتا جب اس مال پر دُلہن کا کوئی حق نہیں۔ سسرال والے اسے نہیں دیں گے اور اگر سسرال والوں کے ہاں غالب عرف یہ ہے کہ وہ زیورات جوڑے کپڑے دُلہن کو مالک بناکر دیتے ہیں تو وہ دُلہن کا حق ہے۔ سسرال والے اس مال کو روک نہیں سکتے۔ یونہی ان اشیاء میں سے اگر کوئی چیز شوہر نے دُلہن کو بطورِ تحفہ دی تھی جب بھی دُلہن اُس کی مالک ہو گئی۔
                                                                            واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب
                                                                            مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ
                                                                            خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر
                                                                             صفر المظفر 1408 ہجری 30 ستمبر 1987ئ


     

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • استقبل ربيع الأول
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری