Question & Answer

  • عورت عدت شوہر کے گھر میں گزارے

    الاستفتاء 

    کیا فرماتے ہیں علمائے دین و مفتیانِ شرع اِس مسئلہ کے بارے میں کہ

    ایک عورت کی شادی ہوئی۔ آٹھ روز بعد اُس کے شوہر کا انتقال ہو گیا۔ وہ عورت ماں باپ کے گھر نہیں جانا چاہتی۔ سسرال میں رہناچاہتی ہے۔ ازروئے شرع وہ سسرال میں رہ سکتی ہے یا نہیں؟

    السائل

    شمشاد حسین بیراج روڈ سکھر

    الجواب بعون الملک الوھاب

    دورانِ عدت عورت پر لازم تھا کہ وہ شوہر کے گھر میں عدت گزارے لہٰذا اب تک جو وہاں رہی بہتر کیا۔ بعد از عدت اگر وہاں رہنے پر سسرال والے راضی ہو جاتے ہیں اور اجنبیوں سے خلوت یا میل جول کی صورت نہیں بنتی تو گنجائش ہے ورنہ اجازت نہیں۔ اِس کا سب سے بہتر حل یہ ہے کہ اپنے دیور وغیرہ سے نکاح کر لے۔ اب یہ وہاں ہی رہے گی اور دوسرے خطرات سے محفوظ رہے گی۔ عورت عاقلہ بالغہ ہے اگر بلا اجازت والدین کے بھی نکاح کرے گی تو نکاح لازم ہو جائے گا۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر

    یکم رمضان المبارک 1406 ہجری 11 مئی 1986ئ

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری