Question & Answer

  • غیر محرم کا گھر میں آنا جانا

    الاستفتاء

     عمرو کی بیوی اس کے ساتھ رہتی ہے اور نکاح نامہ میں یہ شرط موجود ہے کہ عمرو کے گھر اس کے رشتہ دار اس کی بیوی کے نا محرم آتے ہیں عمرو کی بیوی انہیں منع کرتی ہے تو جھگڑا ہوتاہے اور عمرو کا والد جو ساری برادری اور رشتہ داری میں بدنام اور بد چلن ہے۔عمرو کی غیر موجودگی میں آتا ہے اگر عمرو کی بیوی روکتی ہے کہ تو وہ لڑتا ہے۔ برائے کرم ان مسائل کا حل قرآن وحدیث کی روشنی میں بتائیں

    بسم اللہ الرحمن الرحیم

    الجواب بعون الملک الوھاب

    نکاح نامہ میں نا محرم لوگوں کے آنے جانے کی پابندی کا ذکر ہو یا نہ ہو،نامحرم لوگوں کا آنا جانا حرام ہے۔سسر سے اگر چہ پردہ نہیں لیکن جیسے سوال میں بتایا گیا ہے کہ اس کا چال چلن اچھا نہیں ہے ایسے شخص کا بھی شوہر کی غیر موجودگی میں جانا جائز نہیں کہ اس جانا محل فتنہ ہے۔والفتنۃ اشد من القتل

    واللہ تعالی اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر ۹ ذوالحجہ1419 

    مطابق27-3-99۔

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری