Question & Answer

  • زوجہ، بھائی اور پانچ بیٹوں میں ترکہ کی تقسیم

    الاستفتاء 

    ایک مکان دو بھائیوں کے نام ہے۔ایک بھائی فوت ہو گیا اس کی ایک بیوی اور پانچ بیٹیاں ہیں،دوسرابھائی جو حیات ہے اس کے پانچ لڑکے اور چار لڑکیاں ہیں؟ ان ورثائ میں ترکہ کیسے تقسیم ہو گا

    الجواب بعون الملک الوھاب

    سائل نے بتایا کہ مرحوم نے ان لوگوں کے علاوہ ایک کم سن لڑکا بھی چھوڑاتھا جو کچھ ماہ بعد فوت ہو گیا تھا۔لہذا اس صورت میں برتقدیر صدق سائل حسب شرائط مرحوم کی کل جائیداد بشمول آدھے مکان کے ۱۲۰ حصوں میں منقسم ہو گی۔جن میں سے مرحوم کی بیوی کو ۲۰ اور ہر بیٹی کو ۱۹۔۱۹ اور بھائی کو ۵ حصے پہنچیں گے۔

    واللہ تعالی اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر ۲ ربیع الثانی ۱۴۰۵ ھ

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری