Question & Answer

  • شراکت

    الاستفتاء 

    کیا فرماتے علمائ کرام اس مسئلہ میں کہ

    میں نے ایک شخص سے نفع ونقصان پر ساڑھے نو ہزارروپے لئے اور کپڑے کا کا م کرتا رہا۔تقریبا چوبیس سال کا عرصہ گزر گیا ہے کہ میں اسے ہر سال منافع پر تقریبا گیارہ بارہ ہزار روپے دیتا رہا۔پھر کئی سالوں تک سولہ سو روپے دیتا رہا۔اب دکان میں بہت زیادہ نقصان ہوگیاہے جسکی وجہ سے مجھے گھر چھوڑ کرسندھ میں جانا پڑا اور میں نے اس سے سات ہزار روپے لینے ہیں جو مکہ وہ مجھ سے کپڑا لیتا رہا۔اس کے علاوہ اس کو تیس بتیس ہزار روپیہ پہنچ چکا ہے۔آپ بتائیں قرآن وحدیث کی رو سے کیا حکم ہے۔

    محمد اسماعیل کھڈیاں خاص

    تحصیل وضلع قصور

    الجواب بعون الملک الوھاب

    سائل کا کہنا ہے کہ شخص مذکور نے یہ روپیہ شراکت کے طور پر ڈالاتھا لہذا صورت مسئولہ میں بر تقدیر صدق سائل تیس بتیس ہزار کی رقم جو اسے پہنچی وہ اس کا حق تھا اور جو دکان مین نقصان ہوا وہ سائل پر اور اس شخص پر حصے کے مطابق پڑے گا۔اور سات ہزار کا قرض ،سائل کو وصول کرنے کا حق حاصل ہے۔یہ سب اس صورت میں ہے کہ شخص مذکور شراکت تسلیمکرے اگر تسلیم نہیں کرتا تو سائل کو گواہان شرعی پیش کرنے ہوں گے اور اگر شرعی گواہ پیش نہ کر سکا تو شخص مذکور سے قسم لی جائے گی۔

    واللہ تعالی اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفر لہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر۴ذوالقعدہ ۱۴۰۹ھ مطابق ۹۔۸۔۸۹

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری