Question & Answer

  • میت کے بیٹے کی موجودگی میں چچا زاد وارث نہیں ہوگا

    الاستفتاء 

     کیا فرماتے علماء کرام اس مسئلہ میں کہ میری دادی کا انتقال آج سے سے چالیس سال پہلے ہو۔دادی نے اپنے ورثاء میں صرف ا یک بیٹا (یعنی میرے والد )چھوڑا۔اس کے علاوہ میری دادی کے دو چچا زاد بھائی تھے۔اب میرے والد کا بھی انتقال ہو چکا ہے اس کا حقیقی وارث میں ہی ہوں لیکن تقریبا دس بارہ سال سے میری دادی کے چچا کے بیٹوں اور ان کی اولادنے میری دادای کی جائیدا دپر قبضہ کر لیا ہے اور خود کو وہ دادی کا وارث ظاہر کرتے ہیں۔ کیا ان کا اس جائیداد میں حق یا نہیں؟ وضاحت فرمائیے۔

    السائل

    محمدسلطان گرواہ

    مارتھ جلالپور بھٹیاں ضلع حافظ آباد

    الجواب بعون الملک الوھاب

    صورت مسؤلہ میں برتقدیر صدق سائل ،شرائط فرائض کے مطابق آپ کی دادی کی ساری جائیداد کا مالک آپ کا والد ہے اور والد کے انتقال کے بعد اس جائیداد کے آپ مالک ہیں۔دادی کے چچا زاد بھائیوں کی اولاد کا کچھ حصہ وحق نہیں۔

    واللہ تعالی اعلم بالصواب

    محمد شہزاد خان

    جامعہ ربانیہ غوثیہ ماڈل کالونی اصحابی ٹاؤن

    ملیر کراچی ١٤ فروری ٢٠١٣

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری