Question & Answer

  • لاؤڈ اسپیکر پرنماز کی ادائیگی

    الاستفتاء

    کیا فرماتے ہیں علماء دین اس مسئلہ کے بارے میں کہ

    اگر نماز کے وقت لوگ کثیر تعداد میں ہوں کہ امام کی آواز سب تک نہ پہنچ سکتی ہو تو ایسی صورت میں کیا کسی مکبر کے سامنے لاؤڈ سپیکر لگایا جاسکتاہے یا نہیں؟کیونکہ اس صورت میں امام صاحب اسپیکر میں تکبیرات نہیں کہیں گے بلکہ ان کی آواز کو سن کر مکبر لاؤڈ میں تکبیرات کہے گا۔ برائے مہربانی یہ بتائیں کہ لاؤڈ اسپیکر پر نماز بہترہے یا مکبر کھڑا کرنا بہتر ہے؟

    السائل

    مشتاق احمد قادری

    الجواب بعون الملک الوھاب

    علماء کی اکثریت لاؤڈ اسپیکرپر نماز پڑھنے کو جائز کہتی ہے البتہ کچھ علماء ناجائز بتاتے ہیں مگر قواعد شرع وعقل کے قریب تر پہلا قول ہے۔تو جب لاؤڈ اسپیکرپر نماز جائزہے تو اس تکلف کی کیا حاجت کہ امام نماز بغیر لاؤڈ پڑھائے اور مکبر لاؤڈ پر تکبیرات کہے اگر لاؤڈ اسپیکر پر نماز کی اجازت نہیں تو تکبیرات کہنے کی کیوں اجازت ہے۔ہاں اگر کوئی ایسا کرے تو حرج بھی نہیں۔

    واللہ تعالی اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراھیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ

    باغ حیات علی شاہ سکھر ۹۲ ربیع الاول ۹۰۴۱ھ مطابق11/11/88

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری