Question & Answer

  • بوسہءِ قبور ممنوع ہے

    الاستفتاء

    کسی مزار کو ہاتھ لگانا اور چومنا جائز ہے؟بینوا توجروا

    الجواب بعون الملک الوھاب

    بوسہءِ قبور ممنوع ہے۔

    طحطاوی علی المراقی میں ہے

    و لا یمسح القبر و لا یقبلہ و لا یمسہ فان ذالک من عادۃ النصارٰی

    (طحطاوی علی المراقی ص 341)

    یعنی زائر نہ مسح قبر کرے نہ اسے بوسہ دے نہ چھوئے کہ یہ نصاریٰ کی عادات سے ہے۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    محمد شہزاد خان

    جامعہ ربانیہ غوثیہ ماڈل کا لونی اصحابی ٹاؤن ملیر کراچی 

    پندرہ(۱۵) اپریل ۲۰۱۴

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • استقبل ربيع الأول
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری