Question & Answer

  • قبرستان کیلئے وقف کردہ زمین کاشت کرنا

    الاستفتاء 

    وقف شدہ زمین کو کاشت کرنا کیا فرماتے ہیں علمائے دین و مفتیانِ شرع متین کہ ایک آدمی نے اپنی زمین تین کنال قبرستان کے نام وقف کی لیکن دوسرا اس کا بھائی اس زمین کی کاشت کرتا ہے۔ کیا یہ جائز ہے؟ جواب دے کر مشکور فرمائیں۔ شکریہ

    السائل

    محمد بنارس خان

    الجواب بعون الملک الوھاب

    سائل نے بتایا کہ واقف کے امر سے اس کا بھائی اس غرض سے کاشت کرتا ہے کہ اس سے جو رقم ہاتھ آئے گی وہ قبرستان کی ضروریات مثلاً چار دیواری وغیرہ کے لیے خرچ کی جائے گی تو یہ صورت جائز ہے۔

    و نظیرہ ما فی الخانیۃ ارض لاھل قریۃ جعلوھا مقبرۃ و اقبروا فیھا ثم ان واحدا من اھل القریۃ بنی فیھا بیتاً لوضع اللبن وادارۃ القبر و اجلس فیھا من یحفظ المتاع بغیر رضاء اھل القریۃ او رضی بذالک بعضھم قالوا ان کان فی المقبرۃ سعۃ لا بأس بہ الخ……

    خانیہ ص۳۱۳ج ۳

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 5 ربیع الثانی 1406 ہجری 17 دسمبر 1985ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری