Question & Answer

  • شرکت

    الاستفتاء

    کیا فرماتے ہیں علمائے کرام و مفتیانِ دین درجِ ذیل مسئلہ میں شرع کا کیا حکم ہے کہ 

    دو اشخاص آپس میں ایک دکان لینا چاہتے ہیں برابر۔ برابر کی رقم ملا کر مگر ایک شخص ان میں سے یہ شرط عائد کر رہا ہے کہ دُکان کی فروخت کا حق فقط مجھے یعنی ایک کو دیا جائے۔ سو عرض یہ کرنی ہے کہ یہ شرط عائد کرنا کیسا ہے؟ اور اگر دوسرا شخص یہ شرط مان لے خوشی سے تو یہ شرکت جائز ہو گی یا ناجائز؟ نیز یہ کہ اُوپر والی شرط باطل ہے یا فاسد؟ اگر فاسد ہے تو ابتدائے شرکت فاسد شرط کی موجودگی میں کرنا جائز ہے کہ ناجائز؟ اور اگر شرکت چل رہی ہو بعد میں فاسد شرط عائد کی جائے تو چلنے والی شرکت کا کیا حکم ہے، توڑ دی جائے یا بحال رہے؟

    الجواب بعون الملک الوھاب

    صورتِ مسؤلہ میں یہ شرکت جائز ہے اور شرط باطل و ناقابل اعتبار اور شرط منظور کرنے کے بعد بھی ہر فریق کو ایک حصہ بیچنے کا اختیار ہے۔

    ہندیہ ص303 ج 2 میں ہے۔

    رَجُلٌ قَالَ لِرَجُلٍ اشْتَرِ جَارِیَۃَ فُلَانٍ بَیْنِی وَبَیْنَکَ عَلَی أَنْ أَبِیعَہَا أَنَا، قَالَ: الشَّرْطُ فَاسِدٌ وَالشَّرِکَۃُ جَاءِزَۃٌ قَالَ: وَکَذَلِکَ کُلُّ شَرْطٍ فَاسِدٍ فِی الشَّرِکَۃِ، وَلَوْ قَالَ: عَلَی أَنْ تَبِیعَہَا، کَانَ ہَذَا جَاءِزًا وَہِیَ مُشْتَرَکَۃٌ بَیْنَہُمَا یَبِیعَانِہَا عَلَی تِجَارَتِہِمَا، کَذَا فِی الْمُحِیطِ .

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 24 ربیع الثانی 1407 ہجری 26 دسمبر 1986ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری