Question & Answer

  • کسی کام کے کرنے یا نہ کرنے پر طلاق کو معلق کرنا

    الاستفتاء

     جناب اعلیٰ

    السلام علیکم 

    سوال: میرے ساتھ ایک مسئلہ ہے آپ سے فتویٰ چاہتا ہوں۔ میں شادی شدہ ہوں میرے چار بیٹے اور دو بیٹیاں ہیں۔ دو بیٹوں کی شادی کر چکا ہوں۔ مجھے ایک لڑکی جو میرے دفتر میں کام کرتی تھی اُس سے مجھے محبت ہو گئی ہے۔ میری عمر تقریباً 46 سال ہے اور لڑکی کی عمر 22 یا 23 سال ہے۔ جناب اعلیٰ میرے بچے اور میری بیوی اور میرا بھائی اس کے سخت خلاف ہیں۔ میں اور لڑکی ایک دوسرے کو بہت چاہتے ہیں۔ میرا بھائی لڑکی کے گھر گیا وہاں اُس نے لڑکی کے بھائی اور والدہ کو اور لڑکی کی بہنوں کو بہت برا بھلا کہا اور اُن کو سخت الفاظ میں منع کر کے آیا ہے اور ان سے بدتمیزی بھی کی ہے۔

    جب مجھے معلوم ہوا کہ میرے بھائی نے یہ حرکت کی ہے تو میں نے غصے میں قرآن پاک اُٹھا کر قسم کھائی کہ میں اگر لڑکی کو چھوڑ دوں گا یا لڑکی سے شادی نہیں کی تو میری بیوی کو طلاق ہو جائے گی۔ اگر میرا بھائی میرے سامنے ہوتا تو پتہ نہیں کیا ہو جاتا۔ میں آپ سے معلوم کرنا چاہتا ہوں کہ قسم کا کیا ہو گا؟ آج بھی لڑکی اور اُس کی والدہ شادی کے لیے تیار ہیں۔ لڑکی کے دو بھائی ہیں وہ تیار نہیں۔ اس مسئلہ کا جواب چاہیے۔ میں آپ کا بے حد ممنون رہوں گا۔ شکریہ ٭ میری پہلی بیوی نے مجھے دوسری شادی کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ ٭ اگر میں جس لڑکی کو چاہتا ہوں اُس سے شادی نہ کروں تو قسم کھائی ہے اُس قسم کا کیا ہو گا؟

    محمد ارفعان

    بابرکی بازار سکھر

    الجواب بعون الملک الوھاب

    مسئلہ کا جواب جاننے سے پہلے یہ سمجھ لیجئے کہ جب کوئی شخص کسی کام کے کرنے سے متعلق قسم کھا لے اور پھر اس کو نہ کرے تو قسم ٹوٹ جاتی ہے۔ اسی طرح اگر کسی کام کے نہ کرنے سے متعلق قسم کھا لے اور پھر اس کو کر لے تو بھی قسم ٹوٹ جاتی ہے اور جب قسم توڑ بیٹھے تو پھر اس کا کفارہ ادا کرنا ضروری ہے۔

    چنانچہ ہدایہ شریف کتاب الایمان میں ہے:

    والمنعقدۃ ما یحلف علی امر فی المستقبل ان یفعلہ او لا یفعلہ و اذا حنث فی ذلک لزمتہ الکفارۃ۔ قسم منعقدہ یہ ہے کہ مستقبل میں کسی کام کے کرنے یا نہ کرنے سے متعلق قسم کھائے اور جب قسم توڑ دے تو کفارہ لازم آئے گا۔ اسی طرح اگر کوئی شخص کسی کام کے کرنے پراپنی بیوی پر طلاق کو معلق رکھے تو جب وہ کام کر لے گا تو اس کی بیوی کو طلاق ہو جائے گی۔

    اسی طرح کسی کام کے نہ کرنے پر اپنی بیوی پر طلاق کو معلق رکھے تو جب وہ کام نہیں کرے گا تو اس کی بیوی پر طلاق واقع ہو جائے گی یعنی کسی شرط پر طلاق کو معلق رکھنا لہٰذا جب وہ شرط پائی جائے گی تو طلاق واقع ہو جائے گی۔ اس بات کو جاننے کے بعد آپ کا مسئلہ واضح ہو گیا یعنی آپ نے جو الفاظ قسم کھا کر کہے کہ ”میں اگر لڑکی کو چھوڑ دوں گا یا لڑکی سے شادی نہیں کی تو میری بیوی کو طلاق ہو جائے گی۔ پس ان الفاظ کی روشنی میں اگر آپ نے لڑکی کو چھوڑ دیا یا اس سے شادی نہیں کی تو آپ کی پہلی بیوی کو ایک طلاق ہو جائے گی اور اس صورت میں آپ کی قسم نہیں ٹوٹے گی مگر واضح رہے کہ شادی نہ کرنے کی صورت میں آپ کی زندگی کی آخری سانس تک موقوف رہے گی یعنی اگر زندگی کی آخری سانس تک بھی آپ نے لڑکی سے شادی نہ کی تو آپ کی پہلی بیوی کو ایک طلاق ہو جائے گی اور اگر آپ نے لڑکی کو نہ چھوڑا یا اس سے شادی کی تو پھر آپ کی پہلی بیوی کو طلاق نہیں ہو گی البتہ اس صورت میں آپ کی قسم ٹوٹ جائے گی۔ لہٰذا اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی پہلی بیوی کو طلاق نہ ہو تو اس صورت پر عمل کرنا ہو گا اور چونکہ اس صورت میں آپ کی قسم ٹوٹ جائے گی۔ لہٰذا قسم ٹوٹ جانے کے بعد آپ کو کفارہ دینا لازم ہو گا۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    محمد فاروق عطاری

    دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر،15 جمادی الاول 1428 ہجری 11 اگست 2000ء الجواب صحیح

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 15 جمادی الاول 1428 ہجری 11 اگست 2000ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری