Question & Answer

  • نفقہ دونوں (یعنی میاں،بیوی) کی حیثیت دیکھ کر مقرر کیا جائے گا

    الاستفتاء
    سوال: کیا فرماتے ہیں علمائے کرام ازروئے شرع شریف کہ ایک شخص مثلاً بنام زید نے اپنی بیوی کو طلاق دے دی زید کو اپنی مطلقہ بیوی سے دو بچے ہیں، بیوی اپنے شوہر سے طلاق لے کر اپنے ماں باپ کے پاس چلی گئی۔ زید کے جو دو بچے تھے وہ شروع دن سے ہی زید کے پاس رہ رہے ہیں۔ اب زید کی بیوی زید سے اپنے ایام انتظار کا نان و نفقہ مانگ رہی ہے۔ اب سوال طلب امر یہ ہے کہ زید کے اُوپر صرف اپنی مطلقہ بیوی کا فی ماہ کے حساب سے کتنا ازروئے شرع لازم آتا ہے جبکہ زید کی تنخواہ مالی استطاعت کے حوالے سے صرف تین ہزار ماہانہ ہے۔ نان و نفقہ کے واجب ہونے میں خاوند کی استطاعت کا لحاظ کیا جائے گا یا بیوی کے نان و نفقہ کے بارے میں بیوی کے حال 
    کا لحاظ رکھا جائے گا۔
    مستفتی
    عبدالستار
    الجواب بعون الملک الوھاب
    مطلقہ کا نان و نفقہ شوہر پر لازم ہے جب تک وہ عدت میں ہے۔ نفقہ دونوں کی حیثیت دیکھ کر مقرر کیا جائے گا۔ اگر دونوں غنی ومالدار ہیں تو مالداروں والا اور اگر دونوں فقیر ہیں تو غریبوں والا اور اگر ایک مالدار اور ایک غریب ہے تو متوسط و درمیانہ درجہ کا لازم ہو گا۔ صورتِ مسؤلہ میں شوہر بظاہر فقیر ظاہر کیا گیا ہے۔ اگر عورت کا حال بھی ایسا ہی ہے تو مرد پر لازم ہو گا کہ اس حیثیت کے لوگ معروف طریقہ سے جتنا خرچہ کرتے ہیں اتنا خرچ ادا کرے۔ مثلاً اس حیثیت کے لوگ فی ماہ فی کس ایک ہزار روپے خرچ کرتے ہیں تو شوہر پر فی ماہ ایک ہزار روپیہ دینا لازم ہو گا اور اگر ایسے لوگوں کا خرچ 1500/- روپے ہے تو اتنے ہی شوہر پر لازم ہوں گے۔ اب اگر شوہر کی آمدنی کم ہے تو جس قدر گنجائش نکلتی ہے مثلاً 500/- کی گنجائش ہے تو مزید کسی سے قرض لے کر 500/- میں شامل کرے اور بیوی کا نفقہ ادا کرے اور اگر بالفرض قرض نہیں لے سکتا تو جس قدر ادا کر سکتا ہے ادا کرے اور باقی رقم شوہر پر بیوی کی طرف سے قرض ہو گی۔ جب بھی ادائیگی پر قادر ہوا کرے ورنہ اگر مرد کا انتقال ہو گیا تو عورت قرض خواہ کی حیثیت سے اس کے ترکہ سے قرض کی رقم پائے گی۔ اور اگر بیوی مالدار خاندان کی ہے تو امیر اور غریب کے درمیان کا خرچ مقرر کیا جائے گا۔ جو شوہر ادا کر سکا ادا ہو گیا بقیہ رقم اس پر قرض رہے گی۔
    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب
    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ
    خادم جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر
    یکم جمادی الثانی 1426 ہجری

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری