Question & Answer

  • رمی۔ قربانی۔ حلق اور طوافِ زیارت میں ترتیب واجب ہے

    الاستفتاء

     محترم حضرت مفتی صاحب زید مجدہٗ

    السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ

    سوال: یہ بات معلوم کرنی ہے اُمید ہے راہنمائی کر کے مشکور فرمائیں گے۔ جیسا کہ حاجی 9 ذی الحجہ کو عرفات سے مزدلفہ رات کو پہنچ کر وہاں رات کو مغرب و عشاء اکٹھی پڑھتا ہے۔ صبح فجر کی نماز سے فارغ ہو کر وقفہ دے کر منیٰ کے لیے روانہ ہوتا ہے۔ بعضے حجاج رش (جم غفیر) سے بچنے کی وجہ سے منیٰ سے سیدھے پہلے طوافِ زیارت کر لیتے ہیں اس کے بعد منیٰ پہنچ کر دسویں کی رمیٰ کر کے قربانی کرتے ہیں پھر حلق کرتے ہیں اس کے بعد احرام کی پابندی ختم ہوتی ہے۔ آیا یہ طریقہ بھی صحیح ہے ایسا کرنے سے حج میں تو نقص نہیں رہتا ہے جبکہ افضل طریقہ یہ ہے کہ رمی۔ قربانی۔ حلق کے بعد طوافِ زیارت کرنا۔ مطمئن کر دیجئے۔

    احمد حسن

    باغ حیات علی شاہ سکھر

    الجواب بعون الملک الوھاب

    رمی۔ قربانی۔ حلق اور طوافِ زیارت میں ہمارے امام سیدنا امام اعظم رحمہ اللہ تعالی کے نزدیک ترتیب واجب ہے اور اس کے ترک پر دم لازم ہے۔ صورتِ مسؤلہ میں جو کہ طواف چوتھے مرتبہ پر ہے اور رمی کی تقدیم اس پر واجب ہے اس لیے ترک واجب کی بنا پر دم سے آئے گا۔ لہٰذا اس طریقہ سے احتراز چاہیے۔ کذا فی الفتح ج 2 ص 253۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 18 صفر المظفر 1408 ہجری 12 اکتوبر 1987ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • استقبل ربيع الأول
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری