Question & Answer

  • زکوۃ کی رقم بطور قرض دینا

    الاستفتاء

     جناب محترم قبلہ مفتی محمد حسین صاحب قادری

    السلام علیکم!

    سوال: بعض آداب و سلیمان کے گزارش ہے کہ مندرجہ ذیل سوال کا جواب قرآن و سنت کی روشنی میں فتویٰ دے کر مہربانی فرمائیں۔ ہمارے ادارے میں زکوٰۃ فنڈ موجود ہے۔ اس کو ہم اپنے ذیلی ادارے و کریڈٹ سوسائٹی کو بطورِ قرض دے سکتے ہیں یا نہیں۔ جواب ارسال فرما کر مشکور فرمائیں۔ فقط والسلام

    الجواب بعون الملک الوھاب

    صورتِ مسؤلہ میں یہ رقم قرض میں نہیں دی جا سکتی البتہ حیلہءِ شرعیہ کے بعد اس کو قرض میں دیا جا سکتا ہے یعنی زکوٰۃ کی رقم کسی فقیر کی ملک کر دی جائے پھر وہ فقیر آپ کے ادارے کو وہ رقم عطیہ میں دے دے۔ اب اس رقم کو قرضہ میں دیا جا سکتا ہے۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 22 جمادی الاول 1408 ہجری 13 جنوری 1988ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری