Question & Answer

  • بچیوں کیلئے خریدے گئے سونے پر زکوۃ

    الاستفتاء

    ایک شخص جس کے پاس پہلے ہی سے اتنا سونا زیور کی شکل میں موجود ہے جس پر کہ زکوٰۃ فرض ہوتی ہے اور وہ اپنی دو بچیوں کے لیے اُن کی شادی میں دینے کے لیے اور خریدتا ہے تو کیا ان بچیوں کے لیے جو سونا خریدا گیا ہے اس پر بھی زکوٰۃ فرض ہوتی ہے جبکہ پہلے سے موجود سونے پر تو ہر سال زکوٰۃ دیتا ہے۔ جواب دے کر ایک مشکل حل فرمائیں۔ (جزاک اللہ)

    الجواب بعون الملک الوھاب

    اگر بچیوں کے لیے سونا خریدا اور ابھی وہ سونا بچیوں کو دینے نہیں پایا تھا کہ وہ تاریخ آ گئی جس میں وہ زکوٰۃ ادا کیا کرتا ہے اور اس تاریخ پر اس کا سال مکمل ہو جاتا ہے تو ایسی صورت میں اس سونا پر زکوٰۃ آئے گی۔ اور اگر زکوٰۃ کی تاریخ آنے سے قبل اس نے بچیوں کو رخصت کر کے انہیں سونا پہنا دیا یا رخصتی سے پہلے انہیں بخشش کر دیا تو اب باپ پر زکوٰۃ نہیں آئے گی۔ البتہ اب ان بچیوں پر زکوٰۃ آئے گی اگر وہ صاحب نصاب ہوں ورنہ ان پر بھی نہیں آئے گی۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم دارالافتاء جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 22 صفر المظفر 1409 ہجری 4 اکتوبر 1988ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری