Question & Answer

  • عشر

    الاستفتاء

    سوال(1-4): کیا فرماتے ہیں علمائے دین مندرجہ ذیل مسائل کے بارے میں کہ: (1) میرے پاس ایک زمین ہے جس کا عشر حکومت وصول کرتی ہے۔ کیا عشر ادا ہو جاتا ہے یا نہیں؟ (2) جس زمین کی آمدنی سے عشر ادا کر چکا۔ کیا اُس آمدنی (رقم) کی زکوٰۃ بھی ادا ہو گئی یا زکوٰۃ علیحدہ دینی ہو گی؟ (3) کچھ زمین میرے پاس ٹھیکے پر ہے۔ اِس حساب سے کہ آمدنی یا پیداوار کا 25% مالک زمین کا۔ 25% میرا اور 50% اجیر کا۔ ایسی زمین کا عشر مالک زمین پر ہے یا مجھ پر؟ (4) زکوٰۃ کے مصارف کیا کیا ہیں؟ اور یہ کہاں کہاں خرچ کی جا سکتی ہے؟

    السائل

    حاجی امیر بخش کھوسہ ڈیرہ اللہ یار

    الجواب بعون الملک الوھاب

    (1): مسئلہ یہ ہے کہ اگر عشر گورنمنٹ وصول کرے اور اسے اس کے مصارف پر خرچ کرے تو عشر ادا ہو جائے گا لیکن گورنمنٹ سے اس کی توقع کم ہے۔ لہٰذا کوشش کریں کہ عشر خود ادا کریں اور اگر گورنمنٹ زبردستی لے لے تو بھی احتیاطاً ادا کریں۔ الجواب(2): زمین کی پیداوارمیں عشر ہے، زکوٰۃ نہیں۔ زکوٰۃ صرف (1) سونا چاندی (2) وہ مال جو تجارت کی نیت سے خریدا ہو (3) جنگل میں چرنے والے جانوروں پر۔ جب عشر ادا کر دیا تو باقی غلہ یا رقم پر زکوٰۃ نہیں۔

    الجواب(3): عشری زمین بٹائی پر دی تو عشر دونوں پر ہے۔ 

    الجواب(4): مصارف زکوٰۃ۔ (1) فقیر (2) مسکین (3) مسافر یعنی جس کے پاس خرچ نہ رہا۔ تو بقدرِ ضرورت زکوٰۃ لینا جائز اور ضرورت سے زائد لینا جائز نہیں۔ (4) مقروض بشرطیکہ ہاشمی، اپنا شوہر، اپنی عورت کو اگر طلاق دے دی ہو تو عدت ختم ہونے تک، وہ جو اپنی اولاد میں ہے جیسے بیٹا، بیٹی، پوتا، پوتی، نواسا، نواسی یا وہ جن کی اولاد میں یہ ہے جیسے ماں، باپ، دادا، دادی، نانا، نانی اگرچہ یہ رشتے معاذ اللہ بذریعہ زنا ہوں، غنی مرد کا نابالغ بچہ نہ ہوں اور زکوٰۃ پر عامل ان کے علاوہ میں زکوٰۃ دی جا سکتی ہے جیسے بھائی،بہن، چچا، پھوپھی، خالہ، ماموں، اپنی بہو، داماد، سوتیلا باپ، سوتیلی ماں، اپنے زوج یا زوجہ کی اولاد۔ بشرطیکہ یہ افراد فقیر ہوں اور تملیک بھی ہو ورنہ زکوٰۃ ادا نہ ہو گی جیسے مسجد، خانقاہ، مدرسہ وغیرہ بنا دینے سے زکوٰۃ ادا نہ ہو گی کیونکہ ان میں تملیک نہیں پائی گئی۔

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    محمد اکمل قادری المتخصص فی الفقہ

    جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 25 مئی 2010ء

    الجواب صحیح

    واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب

    مفتی محمد ابراہیم القادری الرضوی غفرلہ

    خادم جامعہ غوثیہ رضویہ سکھر 25 مئی 2010ء

Ask a Question

Tanzeem Publications

  • رب پہ بھروسہ از مولانا فاروق احمد سومرو
  • شب وروز کی پکار از مولانا کریم داد قادری
  • برائیوں کی جڑ از مولانا احمد رضا
  • ظلم کی برائی از مولانا مشتاق احمد شمس القادری
  • اخلاص از مولان گلشیر احمد قادری
  • رضا بالقضاء از مولانا دانیال رضا
  • نیکی کی بہاریں از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • مہمان نوازی از علامہ عبد المصطفی شیخ زادہ
  • جمالِ شریعت سندھی ترجمہ بہارِ شریعت پہلا حصہ از مفتی جمیل احمد چنہ
  • شکرِ پروردگار از تنظیم الارشاد زیرِ طبع
  • فضائل رمضان از علامہ محمد صادق سومرو
  • عمامہ کے ماثور رنگ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری
  • الاصباح شرح صغری اوسط کبری از مفتی محمد شہزاد حافظ آبادی
  • ستائیس رجب کی عبادتیں ، عبادت یاگمراہی؟ از ابو اریب محمد چمن زمان نجم القادری